English اُردو        
  رابطہ اغراض و مقاصد تعارف سرورق

ستمبر2011ء


پریس ریلیز


دی ایجوکیٹر کالج چیچہ وطنی ،ساہیوال کی طالبات کے ۱۸ رکنی وفد نے گزشتہ روز مقتدرہ قومی زبان کا مطالعاتی دورہ کیا ۔وہ مقتدرہ کے مختلف شعبوں میں گئے اور سکالروں کو اردو زبان میں علمی کام کرتے دیکھا ۔وفد نے مقتدرہ کے کتب خانے کا دورہ بھی کیا اور کتا ب گھر سے مقتدرہ کی شائع کردہ کتابیں بھی حاصل کیں بعد ازاں وفد نے مقتدرہ قومی زبان کے صدرنشین ڈاکٹر انوار احمد سے ملاقات کی ۔ اس موقع پر ڈاکٹر انوار احمد نے طالبات کو مقتدرہ کی تاریخ بتاتے ہوئے کہا کہ یہ ادارہ ۱۹۷۳ء کے آئین کے مطابق قائم ہوا تھا جس کا مقصد اردو کے فروغ اور نفاذ کے لیے موادِخواندگی تیار کرنا تھا جو مقتدرہ اپنا یہ کام مکمل کر چکا ہے اور جب بھی اردو کا نفاذ عمل میں آیا تو کوئی خاص دقت پیش نہیں آئے گی۔
ڈاکٹر انوار نے طلبہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں اردو زبان پر فخر ہے اور یہ ملک کے ہر کونے میں سمجھنی جانے والی رابطے کی زبان ہے ۔انہوں نے موجودہ اردو زبان کی تشریح کرتے ہوئے کہا کہ اب ہمیں اردو میں الفاظ اور ضرب الامثال بدایوں یا حیدرآباد دکن اور لکھنؤ سے نہیں لینی چاہییں بلکہ اردو میں شامل ہونے والے الفاظ، محاورے اور ضرب الامثال مقامی زبانوں اور علاقوں کے ہونے چاہییں۔
انہوں نے کہا کہ طلبہ کو بین الاقوامی زبان ضرور سیکھنی چاہیے لیکن قومی زبان پر شرمندہ نہیں ہونا چاہیے۔ کیونکہ دنیا میں ہر قوم کی اپنی زبان ہوتی ہے ۔طالبات نے مقتدرہ قومی زبان کے ماہنامہ اخبار اردو میں گہر ی دلچسپی ظاہر کی اور بڑی تعداد میں سالانہ خریدار بنے۔
پروگرام کے اختتام پردی ایجوکیٹر کالج چیچہ وطنی ،ساہیوال کے ڈائریکٹر محمود احمد نے مقتدرہ قومی زبان کا میزبانی پر شکریہ ادا کیا۔

(جاوید اخترملک)
مشیر ابلاغ عامہ

 
 
جملہ حقوق بحق ادارۂ فروغِ قومی زبان محفوظ ہیں